Naghma Habib » شاعری
محفوظات برائے ”شاعری“
چلو کہ ہم کسی رستے سے خارچن لائیں
نغمہ حبیب
Wednesday، 7 March 2012

چلو کہ ہم کسی رستے سے خارچن لائیں کہیں تو پھول کھلیں گے ، گل بہار چن لائیں کہیں تو بر سے گی برسات سات ر نگوں کی تو کیوں نہ ڈھونڈ کے رنگین گل و گلزار چن لائیں ذرا سی مانگ لیں طیورِ خوش نوائوں سے خوشی سی جھومتی ہوئی ، کوئی چہکار چن […]

مکمل تحریر پڑھیے »

PoorFairGoodVery GoodExcellent Votes: 4
Loading...


مقبول دعائیں ہیں ارادوں کے اثر سے
نغمہ حبیب
Monday، 27 February 2012

ایک عزم وفا لے کے میں نکلی تو ہوں گھر سے ایسا کبھی نہ ہو کہ میں تھک جائوں سفر سے رستے بھی یہ مشکل ہیں کٹھن ہے یہ سفر بھی اللہ کرے میں نہ پلٹ جائوں کسی رہ گزر سے ہوتی ہے فقط عشق سے ہر کام کی تکمیل آتی ہے یہ آواز میرے […]

مکمل تحریر پڑھیے »

PoorFairGoodVery GoodExcellent Votes: 8
Loading...


وطن گونج اٹھے گا
نغمہ حبیب
Monday، 27 February 2012

ایسا بھی ایک وقت زمیں پر میری ہوگا کہ اقبال کی نواسے وطن گونج اٹھے گا پھر کسی خوشحال کے ایک نعرہ مستانہ کی لے پر جھومے گا ہرجواں تو وطن گونج اٹھے گا جام محبت کا پھر درنگ نے لٹا یا تو محبت کی اس ادا سے وطن گونج اٹھے گا صحرائوں کا دل […]

مکمل تحریر پڑھیے »

PoorFairGoodVery GoodExcellent Votes: 2
Loading...


کچھ ہم نے زندگی میں عجب کام بھی کیے
نغمہ حبیب
Monday، 27 February 2012

کچھ ہم نے زندگی میں عجب کام بھی کیے سب لمحے محبت کے اُس کے نام بھی کیے تضحیک کبھی عشق کی چپ چاپ سہہ گئے کچھ شکوے محبت سے سر عام بھی کیے وقت کی لکیر مٹا کر بھی نہ نادم کبھی ہوئے مرتب نئے سال و مہ و ایام بھی کیے کبھی اس […]

مکمل تحریر پڑھیے »

PoorFairGoodVery GoodExcellent Votes: 9
Loading...


دکھ ہے کہ کسی ظلم پہ بر ہم کوئی نہ تھا
نغمہ حبیب
Tuesday، 15 November 2011

اخلاص و محبت میں یہ دل کم کوئی نہ تھا مگر ہم کو اس ادا پہ زعم کوئی نہ تھا دل کی ہر ایک بات کے قائل تھے سب مگر عقل کا اشارہ بھی مبہم کوئی نہ تھا کہتا تھا ہر ایک شخص نہیں گناہ گار میں لیکن گناہ ضعف پہ ماتم کوئی نہ تھا […]

مکمل تحریر پڑھیے »

PoorFairGoodVery GoodExcellent Votes: 3
Loading...


کہتے رہے تھے عشق کا قصہ فضول ہم
نغمہ حبیب
Tuesday، 15 November 2011

بوتے ر ہے ز مین میں کیکر ببول ہم فصلیں اگی توکیوں ہوئے اتنے ملول ہم صدیوں تلک تو آرزوئے دہر ہم رہے پھر کیا خطا ہوئی کہ ہوئے وقت کی دھول ہم وہ عشق کی ہر بات پر ہنستا رہا سدا کہتے رہے تھے عشق کا قصہ فضول ہم پر خار منزلوں سے پھر […]

مکمل تحریر پڑھیے »

PoorFairGoodVery GoodExcellent Votes: 2
Loading...


قسمت میں ساحلوں کے وہ گہرائیاں کہاں
نغمہ حبیب
Sunday، 11 September 2011

قسمت میں ساحلوں کے وہ گہرائیاں کہاں جوبحر کو نصیب وہ پہنائیاں کہاں ہجومِ آدمی کا نام شہر پڑ گیا لیکن وہ شہرِدل کی بزم آرائیاں کہاں ہر ایک کو ہے فخر فنِ گفتگو پہ آج لیکن وہ سادہ لہجوں کی سچائیاں کہاں لوگوں کے بیچ میں بھی ہر ایک شخص ہے تنہا وہ پُر […]

مکمل تحریر پڑھیے »

PoorFairGoodVery GoodExcellent Votes: 18
Loading...


پھر مسافر پورے گاؤں کا مہماں بنے
نغمہ حبیب
Sunday، 21 August 2011

نہ دلوں میں خوفِ خدا رہا نہ نظر میں کوئی حیا رہی نہ جہاں میں اہل علم رہے نہ عمل میں کوئی وفا رہی نہ جذب و مستی کا ویسا سُرور ہے نہ مقبول کوئی دعا رہی فطرتوں میں محبت نہ باقی رہی نہ وہ عفت مآب صبا رہی نہ دلوں میں الفت کے جذبے […]

مکمل تحریر پڑھیے »

PoorFairGoodVery GoodExcellent Votes: 2
Loading...


زمین اپنی حکم اپنا
نغمہ حبیب
Sunday، 21 August 2011

میرے وطن کی جمیل صبحوں حسین شاموں تیری خاطر یہ جان حاضر تمہاری خاطر جہاں حاضر نہ ڈر ہے کوئی نہ خوف کوئی نہ ڈر عدو کا نہ خوف دوئی جیءں تو نچھاور ہے پیار تجھ پر مریں تو جان اپنی نثار تجھ پر نہ تجھ سے شکوہ نہ کوئی شکایت نہ غرض کوئی، نہ […]

مکمل تحریر پڑھیے »

PoorFairGoodVery GoodExcellent Votes: 2
Loading...


نہ جنون عشق کی داستاں
نغمہ حبیب
Sunday، 21 August 2011

نہ محبتوں کے وہ سلسلے نہ و فور شوق کے و لولے نہ جنون عشق کی داستان نہ وہ عشاق کے حو صلے نہ صحرا نورد نہ کوہ کن نہ ہی خاک بہ سرنہ وہ منچلے نہ ہی عقل و دل میں وہ چپقلش نہ وہ دل رہے نہ وہ فیصلے کہیں بے رخی ہے […]

مکمل تحریر پڑھیے »

PoorFairGoodVery GoodExcellent Votes: 7
Loading...